Thursday , November 15 2018
Home / Health Care in Urdu (page 4)

Health Care in Urdu

Health & Fitness for everyone – currently a day’s fitness is one in all the common problems wherever many of us need to lose their weight or would like some diet set up as a result of in step with the analysis we all know that further body fat and strange feeding habit is that the major reason behind illness. Here we tend to area unit providing the most effective health and fitness researched base authentic information which will extremely assist you for obtaining a contented healthy life.
Health care tips and tricks for you.
Pakistani and indian health care tips for everyone.

Benefits Of Almond Oil For The Face Urdu

Benefits Of Almond Oil For The Face Urdu
Benefits Of Almond Oil For The Face Urdu

بادام کا تیل
اسے جلد کی فطری نمی بحال اوربرقرار رکھنے کیلئے شہرت حاصل ہے خشک اور کھینچی کھینچی جلد پر اس سے مساج کیجئے۔ چہرے کے ساتھ دیگر کھلے حصے جیسے ہاتھ‘ گردن اور پائوں پر بھی مساج کیا جاسکتا ہے۔ جلد کی غذائی ضروریات پوری کرنے کے ساتھ زخم کے نشانات بھی بھرتا ہے۔ خشک موسم میں اس کی افادیت سے بھرپور فائدہ حاصل کیا جاسکتا ہے جب بھی جلد کی نورشنگ کیلئے مصنوعات کا انتخاب کریں پراڈکٹ کے اجزا میں بادام کے تیل کو خریداری کی لسٹ بھی ضرور شامل کرلیں۔
چہرے کے بہت سے بنیادی مسائل مردو خواتین دونوں میں یکساں پائے جاتے ہیں‘ دانے بلیک ہیڈز اور خارش چہرے کے علاوہ بازوئوں اور ٹانگوں پر بھی نمودار ہوسکتی ہیں۔ جلدی مسائل فطری غذائی اجزا سے درست کیے جاسکتے ہیں۔ قدرتی طریقہ علاج ناصرف سستے بلکہ بآسانی استعمال کیے جاسکتے ہیں۔
دانوں سے نجات حاصل کرنے کا ایک آزمودہ اور جلد اثر کرنے والا طریقہ یہ ہے کچے لہسن کا رس لیموں کے رس کے ساتھ ملا کر دن میں ایک بار لگایا جائے دانوں کے ساتھ ان کے بننے کا عمل بھی ختم ہوجائیگا‘ ہوسکتا ہے کہ جلد پر جلن خارش یا کھچائوکا احساس ہو لیکن یہ نسخہ بہت تیزی سے اثرکرتا ہے آپ یہ ترکیب دن میں دوبار بھی دہرا سکتی ہیں اس کا انحصار جلد کی حالت پر ہوگا۔

Benefits of Coffee in Urdu

Benefits of Coffee in Urdu
Benefits of Coffee in Urdu

طبی جریدے بی ایم جے میں شائع ہونے والے ایک تحقیقی جائزے کے مطابق روزانہ تین سے چار کپ کافی پینے سے طبی فوائد حاصل ہوسکتے ہیں۔

تحقیق سے ظاہر ہوا ہے کہ کافی پینے والوں میں جگر کی بیمایوں اور کچھ قسم کے سرطان پیدا ہونے کا خطرہ کم ہوتا ہے، جبکہ دماغ کی رگ پھٹنے سے موت کا خطرہ بھی کم ہوتا ہے لیکن محققین یہ ثابت نہیں کرسکے کہ ایسا کافی کی ہی وجہ سے ہوتا ہے۔

اس تحقیقی جائزے کے مطابق حمل کے دوران زیادہ کافی پینا نقصان دہ ہو سکتا ہے جبکہ ماہرین کا کہنا ہے کہ لوگوں کو طبی فوائد حاصل کرنے کے لیے کافی پینا شروع نہیں کرنا چاہیے۔

یونیورسٹی آف ساوتھ ایمپٹن کے محققین نے کافی کے انسان جسم پر پیدا ہونے والے اثرات کے بارے میں ڈیٹا جمع کیا، جس میں 200 تحقیقات شامل تھیں اور ان میں بیشتر مشاہداتی تھیں۔

ایسے افراد کی نسبت جو کافی نہیں پیتے، وہ افراد جو تقریباً تین کپ روزانہ کافی پیتے ہیں ان میں دل کی بیماریاں لاحق ہونے یا ان سے موت کا خطرہ کم ہوتا ہے۔

کافی استعمال کرنے کا سب سے بڑا فائدہ جگر کی بیماری اور سرطان کے خطرے کو کم کرنے میں دیکھا گیا۔

تاہم اس تحقیق کے شریک منصف اور یونیورسٹی آف ساوتھ ایمپٹن میں شعبہ میڈیسن سے منسلک پروفیسر پال روڈرک کہتے ہیں کہ اس بنیاد پر وہ نہیں کہہ سکتے کہ کافی پینے سے ایسا ہوتا ہے۔ وہ کہتے ہیں کہ افراد کی عمر، تمباکو نوشی اور وہ لوگ کتنی ورزش کرتے ہیں یہ تمام عوامل بھی اثرانداز ہوسکتے ہیں۔

Qad Lamba Karne Ka Totka in Urdu

قد لمبا کرنے میں مددگارآسان طریقے

Qad Lamba Karne Ka Totka in Urdu
Qad Lamba Karne Ka Totka in Urdu

قد لمبا کرنے کی خواہش کس کو نہیں ہوتی مگر کیا اس کا کوئی آسان طریقہ بھی ہے؟

ویسے اس کی سو فیصد ضمانت تو نہیں دی جاسکتی مگر کچھ چیزوں پر عمل کرکے قد کو ایک ہفتے میں ڈیڑھ سینٹی میٹر تک بڑھایا جاسکتا ہے۔
اگر آپ بھی اس کے خواہشمند ہیں تو درج ذیل طریقوں پر عمل کرکے اس کی کوشش کرسکتے ہیں۔

یہ کیسے ممکن ہے؟
جی ہاں واقعی نیند کے دوران بھی آپ اپنے قد کو بڑھا سکتے ہیں، کمر کے بل دس منٹ لینا ہی قد میں پانچ ملی میٹر کا اضافہ کردیتا ہے، اس کی وجہ یہ ہے کہ دن بھر میں ریڑھ کی ہڈی سکڑتی ہے اور لیٹنے کے بعد وہ اپنی اصل شکل میں لوٹ آتی ہے۔ اس لمبائی کو برقرار رکھنے کے لیے چند مخصوص ورزشیں ہیں تاہم ایک بالغ شخص (25 سال سے زائد عمر) کے افراد میں اس کا امکان بہت کم ہوتا ہے اور کوئی چونکا دینے والے نتائج سامنے نہیں آئیں گے۔

سائیکل چلانا
قد لمبا کرنا چاہتے ہیں تو کسی سائیکل پر سوار ہونے کے بعد سیٹ کو اس طرح ایڈجسٹ کریں کہ آپ کی ٹانگوں کو پیڈل تک پہنچنے کے لیے زیادہ کھینچنا پڑے، تاہم گدی کو بہت زیادہ اونچا بھی نہ کریں ورنہ جوڑوں کو نقصان پہنچ سکتا ہے۔

بار پر لٹکنا
یہ ایک آسان ورزش ہے، بس کسی بار پر لٹک جائیں اور جتنی دیر ہوسکیں وہاں لٹکیں رہیں، بتدریج وقت کو بڑھاتے چلے جائیں، یہ ورزش ریڑھ کی ہڈی اور پیٹ کے مسلز کو مضبوط کرتی ہے۔

کندھوں کے بل کھڑے ہونا
کمر کے بل زمین پر لٹین اور پھر سر اور کندھوں کو زمین پر ٹکاتے ہوئے باقی جسم کو ہوا میں اٹھا لیں، اس ورزش کے لیے ٹانگوں کو جسم کی سیدھ میں رکھنا ضروری ہے ورنہ انجری کا خطرہ ہوسکتا ہے۔

کوبرا آسن
پیٹ کے بل زمین پر لیٹیں اور ہاتھ زمین پر ٹکا کر سر اور سینے کو اوپر اٹھالیں کسی سانپ کی طرح، یہ ورزش کمر، کولہوں اور دیگر حصوں کے لیے بھی فائدہ مند ہے۔

لچک کی ورزش
سیدھے کھڑے ہوں اور پھر دونوں ہاتھوں سے زمین کو چھونے کی کوشش کریں، اس پوز میں آپکا سر اور جسم گھٹنوں کے قریب ہو، ابتداءمیں جتنا ہوسکیں جھکیں اور بتدریج اس میں زیادہ آگے جھکنے کی کوشش کریں۔

اچھلنا
ڈوری کی مدد سے اچھلنا یا کسی مقام پر ویسے ہی اچھلنا اس حوالے سے مددگار ثابت ہوتا ہے، اس سے ہڈیاں اور مسلز مضبوط ہوتے ہیں جبکہ وقت گزرنے کے ساتھ قد میں کسی حد تک اضافہ ہوتا ہے۔

تیرنا
سوئمنگ قد بڑھانے والی ورزشوں میں سب سے اوپر سمجھی جاسکتی ہے، پانی کے اندر ریڑھ کی ہڈی کے مہروں پر بوجھ بہت کم ہوتا ہے جبکہ جوڑ زیادہ کھل جاتے ہیں، جس سے قد بڑھانا آسان ہوجاتا ہے۔

خوراک اور نیند
اگر تو آپ قد بڑھانا چاہتے ہیں تو غذا میں کیلشیئم، آئرن، وٹامن ڈی سمیت دیگر عناصر کی موجودگی ضروری ہے جو کہ جسمانی افعال کے لیے ضروری ہیں، جبکہ سخت سطح پر سونا عادت بنانی ہوگی۔

نوٹ: یہ مضمون عام معلومات کے لیے ہے۔ قارئین اس حوالے سے اپنے معالج سے بھی ضرور مشورہ لیں۔